چند تصاویر


آج مجھے ایمیل سے یہ کچھ  تصاویر موصول ہوئی ہیں، آپ سے شیئر کر رہا ہوں۔

پہلی تصویر جرمنی میں کسی ریلوے اسٹیشن سے لی گئی ہے جس میں ایک سائن بورڈ پر لکھا ہوا ہے (تم میں سے سب سے اچھا    وہ ہے  جو اپنی گھر والی کے ساتھ اچھے طریقے سے پیش آتا ہے – فرمان پیغمبر محمد صلی اللہ علیہ وسلم)۔ در حقیقت یہ اس مندرجہ ذیل حدیث شریف  کا ترجمہ یا مفہوم ہے جس میں اسلام کے محاسن کو اجاگر کیا گیا ہے :

رواه الترمذي وابن ماجه عن عائشة رضي الله عنها قالت: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم: خيركم خيركم لأهله، وأنا خيركم لأهلي ۔

عائشہ رضی اللہ عنھا سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا تم میں سے سب سے اچھا وہ ہے جو اپنے اھل خانہ کے ساتھ اچھا ہے اور میں اپنے اھل خانہ کے ساتھ اچھا برتاؤ کرنے والا ہوں، اس حدیث کو ابن ماجہ اور ترمذی نے روایت کیا۔

 

 ٭٭٭٭٭

مندرجہ ذیل باقی کی تصاویر لندن کے ایک مشہور ترین میٹرو ٹرین اسٹیشن سے لی گئی ہیں  جہاں سے ہر ہفتے کروڑوں لوگ گزرتے اور سفر کرتے ہیں۔ پہلی  تصویر میں ایک ایشیائی وکیل خاتون سلطانہ تافادار دکھائی دے رہی ہے اور ساتھ ہی یہ جملہ لکھا ہوا ہے کہ ہم عورتوں کے حقوق  پر ایمان رکھتے ہیں۔ ایسے ہی جیسے محمد  (صلی اللہ علیہ وسلم) ان حقوق کی ضمانت دیتے تھے۔

دوسری تصویر  میں روپن میاں ہیں اور تصویر کی تشریح  خود تصویر سے  پڑھیئے۔

تیصری تصویر کریسٹیان بیکر کی ہے اور ان کی کہانی بھی تصویر سے عیاں ہے۔

سلطانہ تافدار، روپن میاں اور کریسٹیان بیکر تینوں مسلمان ہیں،  برطانیہ میں مقیم ہیں اور مل کر انسانی حقوق  اور رفاہی کاموں میں حصہ لیتے ہیں۔

Advertisements

About محمد سلیم

میرا نام محمد سلیم ہے، پاکسان کے شہر ملتان سے ہوں، تلاشِ معاش نے مجھے آجکل چین کے صوبہ گوانگ ڈانگ کے شہر شانتو میں پہنچایا ہوا ہے۔ مختلف زبانوں (عربی خصوصیت کے ساتھ) کے ایسے مضامین ضن میں اصلاح اور رہنمائی کے دروس پوشیدہ ہوں کو اردو میں ترجمہ یا تھوڑی سی ردو بدل کر کے ایمیل کرنا میرا شوق رہا ہے۔ میں اپنی گزشتہ تحاریر کو اس بلاگ پر ایک جگہ جمع کرنا چاہ رہا ہوں۔ میں مشکور ہوں کہ آپ یہاں تشریف لائے۔
This entry was posted in Uncategorized, اصلاحی and tagged , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink.

31 Responses to چند تصاویر

  1. اسلام و علیکم و رحمۃاللہ و براکاتۃ محترم سلیم بھائی اور دیگر دیگر احباب؛
    کچھ لوگ نیکی کر کے اس کا credit لینا بعث فخر سمجھتے ہیں
    نیکی پھیلانا آپ کا کام ھے کرتے جائیں اور اجر اللہ تعالی دے گا
    میرا پیغام محبت ھے جہاں تک پہنچے۔ بہت سارے لوگ انگلی
    دوسروں کی طرف کرکے اپنا عیب چھپاتے ہیں جبکہ باقی چار
    انگلیاں اسی کی طرف ہوتی ہیں۔ بھیگی بلی کمبا نوچے والی
    بات ان ہٹ دھرم لوگوں پر صادق آتی ہے۔ آللہ ھم سب کو ہدایت
    دے آمین

    ب

  2. محبوب بھوپال نے کہا:

    آسلا اسلام و علیکم و رحمۃاللہ و براکاتۃ محترم سلیم بھائی اور دیگر
    ب اسلام

  3. رضوان نے کہا:

    جمیل صاحب دلچسپی کی بات یہ ہے کہ جو سب سے اوپر آپ نے یو ٹیوب کا لنک سلیم بھائی کو پوسٹ کیا ہے اس میں میرے کافی پرانےکمنٹس بھی شامل ہے۔آپ پاک نیٹ والے arifkarim تو نہیں ہیں جن کا پاک نیٹ پر بھی جھگڑا چلا تھا۔ مجھے آج تک یاد ہے یہ لنک arifkarim نے ایک متنازعہ تھریڈ میں پوسٹ کیا تھا جیسے آج آپ نے یہاں کیا ہے۔اسی لنک کے ذریعہ میں یوٹیوب پر گیا اور میں نے کمنٹس لکھے۔
    بس یونہی پوچھ لیا جی چاہے تو جواب دے دیں نہیں تو نہ سہی۔

  4. رضوان نے کہا:

    میں نے جو دیکھا اور مشاہدہ کیا وہ میں نے یہاں شئیر کیا ہے۔میرا خیال ہے کہ میں نے ایسا کچھ نہیں کہا ہے جس سے کسی کی دل آزاری ہواور میں نے ایک معاشرتی اچھائی کی بات کی ہے مذہب کی نہیں۔اگر کسی کو اتنی سی بات بھی برداشت نہیں ہوتی تو میری بلا سے۔

  5. رضوان نے کہا:

    میں یہاں طارق صاحب کے موقف کی تصدیق کرتا ہوں، کیوں کہ میں خود جرمنی سے ہوں۔ یہ تمام ہورڈنگز اور ایڈورٹائیزنگ قادیانی جماعت نے لگائے ہیں۔یہ لوگ بعض اوقات مختلف پبلک مقامات پر تبلیغ کے لئے سٹال بھی لگاتے ہیں۔ان کےاپنے سٹلائٹ ٹی وی چینلز ہیں خاندان کا ہر فرد باقاعدہ اپنی جماعت کو ماہانہ اور سالانہ بنیاد پر چندہ دیتے ہیں جو جماعت کے اخراجات، تقریبات، اشتہار بازی اور نئی عبادت گاہوں کی تعمیر پر خرچ کیا جاتا ہے۔ ہر سال مختلف بڑے شہروں میں ان کا سالانہ اجتماع ہوتا ہے۔ مذہبی اختلاف سے قطع نظر میں ایک بات ضرور کہنا چاہوں گا کہ یہ لوگ یورپ جیسے کھلے ڈھلے ماحول میں اپنے بچوں کی تربیت پاکستان میں موجود بہت سے پاکستانیوں سے بھی اچھی کرتے ہیں۔

    • Jameel نے کہا:

      مذہبی اختلاف سے قطع نظر میں ایک بات ضرور کہنا چاہوں گا کہ یہ لوگ یورپ جیسے کھلے ڈھلے ماحول میں اپنے بچوں کی تربیت پاکستان میں موجود بہت سے پاکستانیوں سے بھی اچھی کرتے ہیں۔

      ايسا نہ کہو بھائی آپ پہ بھی گستاخی رسول کا الزام لگ جائے گا- آج کل صحيح کام کرنا گستاخی رسول ہے اور توڑ پھوڑ کرنا عشق رسول-

  6. وسیم رانا نے کہا:

    کیا خوب شئیرنگ کی کاش اس طرح کے پاکستان میں بھی شروع ہوجائیں۔۔۔۔۔

    • محمد سلیم نے کہا:

      جناب وسیم رانا صاحب، شکریہ۔
      مغرب کو یہ بتانے کی اشد ضرورت تھی کہ اسلام شفقت، رحمت اور انسانیت کا دین ہے اور جو کچھ ان کو بتایا یر پڑھایا جاتا ہے وہ غلط ہے۔ اس میں کچھ قصور ہمارے اپنے لوگوں‌کا بھی تھا جنہوں‌نے ادھر جا کر اپنی علیحدہ دنیا بنائی۔ ان کی خوبیوں کا تو چرچا نا ہوسکا مگر خرابیاں‌زیادہ سامنے آئیں۔
      وہ انگریز جو مسلمان ملکوں‌میں رہ بس کر کر گئے ان کو اسلام کی حقانیت اور تعلیمات کا زیادہ ادراک ہوا۔ بہت سوں نے اپنا مذہب تو نا چھوڑا مگر اسلام کے معترف ضرور ہوئے۔ سعودیہ میں رہ کر جانے والے کئی انگریز آج بھی یہ حسرت کرتے ہیں‌کہ ان کے بس میں‌ہوتا تو اپنی ساری زندگی وہیں گزارتے۔
      یہ تین لوگ مغرب میں‌اسلام کا اصل چہرہ دکھانے کی تگ ودو میں لگے ہیں، الل تبارک و تعالیٰ ان کو ان کے مشن میں کامیاب کرے اور ہمیں‌بھی اسلام کی اصل تعلیم پر عمل کرنے کی توفیق دے۔ آمین یا رب۔

  7. فیصل مشتاق نے کہا:

    بہت عمدہ ۔۔۔
    مگر افسوس ہم مسلمانوں کو یہ باتیں advertise کرنی پڑی۔ جبکہ ہم میں سے ہر کوئی ایک اچھا مسلمان بن کر ان سب باتوں کا عملی نمونہ بن سکتا ہے۔
    ایک اور نقظہ کیا آپ کا نہیں خیال کہHuman Rights, Social Justice and Environmental Protection جیسے Ads کی ہم پاکستانیوں کو اشد ضرورت ہے جن کا "آوے کا آوا” ہی بگڑا ہوا ہے۔
    اللہ رب العزت ہمیں سمجھ عطا فرمائے۔ آمین

    • محمد سلیم نے کہا:

      جناب فیصل مشتاق صاحب، شکریہ۔
      جی ہاں، آپ نے ٹھیک کہا ہے۔ یہ سلطانہ، روپان اور کریسٹیان بیکر ایک اکائیوں کے نام ہیں جو جہاں ہیں وہاں کی ظلمتوں میں اسلام کے محاسن کی روشنی پھیلا کر آگاہی دے رہی ہیں۔
      ہمارے ہاں بھی ایسے لوگوں کی کمی نہیں مگر بعض اوقات دنیا داری اور ریاکاری ان کے اصل مقاصد پر حاوی آ جاتی ہیں۔ اللہ تبارک و تعالیٰ ہمیں صدق دل سے دوسرے کے کام لائے۔

  8. عطاء رفیع نے کہا:

    ہمیں یہ رویہ اپنانے کی ضرورت ہے۔

  9. طارق نے کہا:

    اسلام علیکم،

    جزاک اللہ بہت اچھی شئیرنگ ہے۔

    جو سب سے پہلے والی تصویر ہے (جرمن زبان میں) وہ احمدیہ مسلم جماعت جنہیں قادیانی بھی کہا جاتا ہے، ان کی طرف سے جرمنی کے بڑے بڑے ریلوے اسٹیشنوں اور دوسری بہت سی پبلک پلیسز پر لگائی گئی ہے۔

    وسلام
    طارق

    • طارق صاحب اگر آپ قادیانی ہیں تو الگ بات۔
      لیکن اگر آپ قادیانی نہیں تو قادیانیوں کو مسلم جماعت کیسے بنایا؟
      اور انکا تعارف جماعت احمدیہ کے نام سے کیونکر کیا؟

      کیا انکاتعارف قادیانی گروہ کے طور پر کافی نہ تھا۔

      دوسری بات یہ کہ یہ آپ کہاں سے کہہ رہے ہیں کہ یہ قادیانی جماعت کا ہی پوسٹر ہے۔۔؟؟؟
      یہ میں اسلئے کہہ رہا ہوں کہ حال ہی میں ہونے والے لندن اولمپکس میں لندن میں ایک مسلم تنظیم کا یہ جملہ شعار اور مونوگرام تھا ۔جو کہ لندن میں ہر سٹیشن وغیرہ پر لگا ہوا تھا۔

      • Jameel نے کہا:

        ساری دنيا ميں تو مسلمان ہی سمجھے اور کہے جاتے ہيں تم لوگوں کو کون پوچھتا ہے ساری دنيا کے سامنے بھيک کے ليئے ہاتھ پھیلانے والو-

        • محمد سلیم نے کہا:

          جناب جمیل صاحب، خوش آمدید۔
          جس طرح ہم یہ عقیدہ رکھتے ہیں‌کہ مسلمان فاسق و فاجر اور گناہگار سب کچھ ہو سکتا ہے مگر جھوٹا نہیں‌ہو سکتا بالکل اسی طرح ہم یہ بھی عقیدہ رکھتے ہیں کہ مسلمان چاہے کیسا بھی ہو مگر عقیدہ ختم نبوت پر ایمان اور سرکار صلی اللہ علیہ وسلم پر اپنی جان و مال، آل و اولاد سب کچھ نثار کرنے والا ہو۔
          بے شک مسلمان اس وقت عتاب میں‌ہیں مگر یہ سب کچھ عارضی ہے۔ اس کا یہ ہرگز مطلب نہیں‌ہے کہ اب بد عقیدہ اور بے مذہب لوگوں‌ کی برتری تسلیم کر لی جائے؟

        • فیصل مشتاق نے کہا:

          منافقت کا لبادہ اوڑھ کر، غلط فہمی پھیلا کر، جھوٹا پراپیگنڈہ، دھوکہ دہی، انگریزوں کی گود میں بیٹھنے کی ڈیڑھ سو سالہ روایت اور مسلمانوں کو ہر موقع پر نقصان پہنچانے کی وجہ سے ہی تم لوگوں(قادیانیوں) کو مسلمان (منافق) سمجھ کر اپنایا جاتا ہے۔

          ختمِ نبوت زندہ باد

        • منافقت کا لبادہ اوڑھ کر، غلط فہمی پھیلا کر، جھوٹا پراپیگنڈہ، دھوکہ دہی، انگریزوں کی گود میں بیٹھنے کی ڈیڑھ سو سالہ روایت اور مسلمانوں کو ہر موقع پر نقصان پہنچانے کی وجہ سے ہی تم لوگوں(قادیانیوں) کو مسلمان (منافق) سمجھ کر اپنایا جاتا ہے۔
          ختمِ نبوت زندہ باد
          ختمِ نبوت زندہ باد
          ختمِ نبوت زندہ باد
          ختمِ نبوت زندہ باد

          • Jameel نے کہا:

            يہ ديکھو کس کے مامے چاچے انگريز اور ہندوؤں کے آگے ليٹے ہوئے تھے اور کون انگريزوں اور ہندوؤں کا مقابلہ کررہے تھے-

    • عبداللہ نے کہا:

      طارق بھائی مجھے یقین ہے کہ یہ بورڈز قادیانیوں‌کی طرف سے نہیں‌لگائے گئے۔ وجہ:
      کافر و گستاخ قادیانی ہمارے پیارے حبیب محمد صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے نام سے اس طرح بھاگتے ہیں جس طرح الو روشنی سے بھاگتا ہے۔
      اور اگر بالفرض انہوں‌نے بھی لگائے ہیں‌تو اللہ نے قیامت تک ہماری جان سے بھی پیارے محمد صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی شان کو کم نہیں‌ہونے دینا۔ ان کا نام ان کے دشمن بھی لیں گے۔

      وَرَفَعْنَا لَكَ ذِكْرَكَ
      سورہ نمبر 94 آیت نمبر 4

    • محمد سلیم نے کہا:

      جناب طارق صاحب، بلاگ پر خوش آمدید۔
      ہمارے پیارے حبیب صلی اللہ علیہ وسلم کو رحمۃ اللعالمین کہا بھی تو اسی لئے گیا ہے کہ کونین میں سب ہی ان سے رشد و ہدایت کی روشنی پائیں گے۔ چند ایک شر پسند یا گمراہ لوگوں کو چھوڑ کر، باقی پر نظر ڈالی جائے تو آپ کے معترفین نظر آتے ہیں۔ طرز حکومت، لوگوں سے برتاؤ، سیاسی بصیرت، دشمنوں سے سلوک، غیر مسلم وفود کا استقبال اور ان سے مالاقاتیں، بچوں سے شفقت، بوڑھوں کی تعظیم، عورتوں کی تکریم اور ان سے برتاؤ کے علاوہ دنیا کا کوئی بھی تو ایسا شعبہ نہیں جہاں آپ کی ذات سے استفادہ نا ہو رہا ہو۔ غیر مسلوں کی کتابیں اور ان کے اقوال آپ کی شان سے بھرے پڑے ہیں۔ رہتی دنیا تک آپ صلی اللہ علیہ وسلم کا خاتم الانبیاء ٹھہرایا جانا آخر بلاسبب تو نہیں ہے۔
      جہاں تک آپ نے یہ معلومات فراہم کی ہیں کہ جرمنی میں یہ اعلانات اور اشتہارات ایک مخصوص جماعت کی طرف سے ہیں مجھے اس کے بارے میں کوئی علم نہیں ہے۔ مجھے یہ تصاویر ایک معتبر ویب سائٹ کا باقاعدہ ممبر ہونے کی وجہ سے بذریعہ ایمیل وصول ہوئیں۔
      اس کے بعد میں باقاعدہ تحقیق کی تو پہلی والی تصویر کا تو راز نا پا سکا مگر دوسری تصاویر عرب دنیا کے سب سے بڑے اخبار الشرق الاوسط میں ایک فیچر کے ساتھ چھپ چکی ہیں، اس فیچر کا لنک درج ذیل ہے۔
      http://aawsat.com/details.asp?section=54&article=573093&issueno=11516

      Inspired By Muhammad ایک غیر سرکاری تنظیم ہے جس کے بارے میں آپ مختصرا ویکیپیڈیا کے اس صفحہ سے جان سکتے ہیں۔
      http://en.wikipedia.org/wiki/Inspired_By_Muhammad

      اس تنظیم کی آفیشل ویب سائٹ کو یہاں سے ملاحظہ کیجیئے۔
      http://www.inspiredbymuhammad.com/

      • نبیل نے کہا:

        پہلے پوسٹر کے اوپر بائیں جانب پرنبدے کی علامت کے ساتھ جو جملہ ہے وہ جماعت احمدیہ کی پہچان ہے۔ اسے گوگل میں‌تلاش کرکے اور ترجمہ کرکے اس کی تصدیق کی جا سکتی ہے۔ اللہ آپ کو آپ کی نیت کا اجر عطا فرمائے، آًین۔

  10. نورمحمد نے کہا:

    بہت عمدہ شیئرنگ ہے جناب ۔ ۔۔ ۔۔

    ہمیں بھی یہ طرز اپنانے کی ضرورت ہے

    جزاک اللہ

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s