محبت ہے تو پھر بھروسہ کیجیئے


ہوائی سفر اس آدمی کیلئے نئی بات نہیں تھی، کبھی کاروبار کے نام پر تو کبھی میٹنگز کے نام، گویا  اُس کا بیشتر وقت ہوائی سفر میں ہی گزرتا تھا۔

اُس نے اپنی زندگی میں خوشگوار سفر دیکھے تھے تو خراب موسم کی پروازوں کا بھی اسے خوب تجربہ تھا۔

مگر آج تو موسم نے کمال ہی کر دیا تھا۔ حد نظر گہرے بادل اور ہوائی جہاز گویا بادلوں میں نہیں ناہموار پہاڑی راستوں پر چل رہا تھا۔ یہ آدمی تو یہاں تک بھی سوچ رہا تھا کہ آج بخیریت اُترنا بھی نصیب ہو پائے گا کہ نہیں۔ جہاز تھا کہ پائلٹ کے کنٹرول میں ہی نہیں آ رہا تھا کبھی ڈانواڈول ہوتا تو کبھی سینکڑوں میٹر نیچے گر کر اوپر ہو رہا تھا۔ مسافروں کو پیش کیا جانے والا کھانا فرش پر بکھر چکا تھا۔ بچے رو رہے تھے تو عورتیں چیخ رہی تھیں۔ ایک نادیدہ خوف سے اسکی آنکھیں پھٹی جا رہی تھیں۔ نشست کو اس نے مضبوطی سے پکڑ رکھا تھا اور ہر جھٹکے ساتھ ہی وہ اللہ سے التجا بھری دعا کرتا کہ اُسے اپنی منزل پر خیریت سے پہنچانا اُس کے قبضہ قدرت میں ہی تھا۔

قسمت کی بات کہ اُسکی نشست ایک بچے کے ساتھ بنی تھی۔ مگر یہ بچہ کیسا نڈر تھا کہ کسی خطرے کا ادراک کیئے بغیر اپنی دنیا میں مگن مزے سے بیٹھا کھیل رہا تھا۔

آخر اس خوفناک سفر کا اختتام آن ہی پہنچا جب پائلٹ نے اعلان کیا کہ ہم چند لمحوں کے بعد اپنی منزل پر بخیر و عافیت اترنے والے ہیں۔

جہاز اترنے کے بعد اس آدمی نے بچے سے پوچھا، بیٹے آج تو بڑے بڑے گھبرا گئے تھے اور جہاز میں ایک کہرام سا مچا ہوا تھا مگر تم کس طرح اتنے اطمینان سے بیٹھے کھیلتے رہے؟

بچے نے جواب دیا: میرے ابو اس جہاز کے پائلٹ ہیں، انہوں نے مجھے بتایا تھا کہ ہم اپنی منزل پر بخیر و عافیت پہنچیں گے۔

*****

جی ہاں، محبت بھروسے کا ہی دوسرا نام ہے۔

کیا ہی اچھا ہو کہ انسان جس سے محبت کرے اُس پر بھروسہ رکھے کہ وہ اُسے تن تنہا نہیں چھوڑے گا اور نا ہی اُسے رسوا کرے گا۔

اور اس دنیا میں سب سے اچھا بھروسہ تو اللہ تبارک و تعالیٰ کی ذات کا ہی ہے ناں، پھر اگر اللہ سے پیار ہےتو اس پر بھروسہ بھی تو  رکھیئے  ناں۔

Advertisements

About محمد سلیم

میرا نام محمد سلیم ہے، پاکسان کے شہر ملتان سے ہوں، تلاشِ معاش نے مجھے آجکل چین کے صوبہ گوانگ ڈانگ کے شہر شانتو میں پہنچایا ہوا ہے۔ مختلف زبانوں (عربی خصوصیت کے ساتھ) کے ایسے مضامین ضن میں اصلاح اور رہنمائی کے دروس پوشیدہ ہوں کو اردو میں ترجمہ یا تھوڑی سی ردو بدل کر کے ایمیل کرنا میرا شوق رہا ہے۔ میں اپنی گزشتہ تحاریر کو اس بلاگ پر ایک جگہ جمع کرنا چاہ رہا ہوں۔ میں مشکور ہوں کہ آپ یہاں تشریف لائے۔
This entry was posted in Uncategorized, اصلاحی and tagged , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , , . Bookmark the permalink.

12 Responses to محبت ہے تو پھر بھروسہ کیجیئے

  1. ایس جے کے نے کہا:

    السلام علیکم

    جزاک اللہ خیرا، آپ نے کسی کہانی کا ترجمہ کیا ہے؟

  2. ام عروبہ نے کہا:

    السلام علیکم
    بالکل ٹھیک کہا-اور اللہ پر بھروسہ اور توکل تو خوش قسمت لوگوں کو ہی ملتا ہے-

  3. محمد سلیم نے کہا:

    بھائی وسیم رانا صاحب، کیا حال ہیں؟ مضمون پسند کرنے کابہت شکریہ۔

  4. وسیم رانا نے کہا:

    ٹھیک کہا سلیم بھائی آپ نے،،، بھروسہ ہی زندگی کا نام ہے

  5. السلام علیکم ورحمتہ اللہ
    عمدہ۔۔ بہترین تحریر ہے

  6. مینگو مین نے کہا:

    جی جناب ابلکل صحیح بات کی ساری بات ہی بھروسے و یقین کی ہے۔
    جتنا بھروسہ مضبوط ہوگا احساسات اتنے ہی مضبوط ہوں گے

  7. زبردست مثال دی ہے آپ نے
    بھروسہ بنتا ہے یقین سے ۔ اور یقین عمل کا نام ہے الفاظ کا نہیں

  8. کفر پرستوں کی کہانیاں سن کر نا تو سبھی نے کافر بن جانا ہے اور نا ہی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s